دسمبر جب بھی آتا ہے

Posted: December 20, 2011 in Global, Poetry, Urdu
Tags:

  • دسمبر جب بھی آتا ہے وہ پگلی۔۔۔۔۔ پھر سے بیتے موسموں کی تلخیوں کو یاد کرتی ہے پرانا کارڈ پڑھتی ہے کہ جس میں اُس نے لکھا تھا میں لوٹوں گا دسمبر میں نئے کپڑے بناتی ہے وہ سارا گھر سجاتی ہے دسمبر کے ہر اک دن کو وہ گن گن کر بتاتی ہے جونہی 15 گزرتی ہے وہ کچھہ کچھہ ٹوٹ جاتی ہے مگر پھر بھی پرانی البموں کو کھول کر !!!ماضی بلاتی ہے نہیں معلوم یہ اُس کو کہ بیتے وقت کی خوشیاں بہت تکلیف دیتی ہیں محض دل کو جلاتی ہیں۔۔۔ یونہی دن بیت جاتے ہیں دسمبر لوٹ جاتا ہے مگر وہ خوش فہم لڑکی۔۔۔ دوبارہ سے کیلنڈر میں دسمبر کے مہینے کے صفحےکو موڑ کر، پھر سے پھر سے دسمبر کے سحر میں ڈوب جاتی ہے کہ آخر اُس نے لکھا تھا۔۔۔۔ میں لوٹوں گا دسمبر میں

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s